99

نیوزی لینڈ حملے میں پچاس نمازیوں کو شہید کرنے والے آسٹریلوی دہشتگرد کا اگلا نشانہ کونستا تھا؟ حیرت انگیز انکشافات

اسلام آباد(ویب ڈیسک) گزشتہ جمعہ کو نیوزی لینڈ میں کرائسٹ چرچ کی مسجدوں پر ہونے والے حملوں میں پچاس نمازی شہید ہو گئے تھے ،نیوزی لینڈکی پولیس کا کہنا ہے کہ سفید فام آسٹریلوی دہشت گرد کو اس وقت گرفتار کیا گیا جب وہ اپنے تیسرے نشانے کیطرف بڑھ رہا تھا۔ پولیس کاکہناہےکہ واقعے کی اطلاع ملنے کے 21 ویں منٹ میں ملزم کو گرفتار کر لیا گیا تھا، مسلح شخص کو دو اہلکاروں نے گرفتار کیا۔پولیس کے مطابق اہلکاروں کو مسلح ہو کر حملے کی جگہ پہنچنے میں دس منٹ لگے تھے۔دوسری جانب کیوی حکام کا کہنا ہے کہ مسجد پر حملے کی ویڈیو کے براہ راست مناظر دوران ملازمت دیکھنے والے ایک ملازم کو نوکری سے بھی نکال دیا گیا ہے۔دریں اثنا وزیر اعظم نیوزی لینڈ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ جمعے کو اذان ریڈیو اور ٹیلی ویژن سے براہِ راست نشر کی جائیگی۔اس کے علاوہ نیوزی لینڈ میں دو منٹ کی خاموشی بھی اختیار کی جائے گی ہماری خواہش ہے کہ مسلم کمیونٹی کو سپورٹ کریں تاکہ وہ مسجدوں میں واپس آئیں خاص طور پر جمعے کو۔انہوں نے حملے کے بعد سب سے پہلے جائے وقوع پہنچنے والے اہل کاروں سے ملاقات کی اور ان کی حوصلہ افزائی کی۔اس موقع پر انہوں نے کہا کہ ملک میں ایسی فضا بنانا ہوگی جہاں تشدد پروان نہ چڑھ سکے۔جیسنڈا آرڈرن کرائسٹ چرچ میں کشمیری ہائی سکول بھی گئیں، شہداء میں سے کئی افراد کا تعلق اس سکول سے تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں