79

موجودہ حکومت خاص ایجنڈے کے تحت لائی گئی، مدرسوں کیخلاف کاروائیوں پر مولانہ فضل الرحمٰن نے اہم اعلان کر دیا،

بنوں:(مانیٹرنگ ڈیسک)
جے یو آئی (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ مدارس کے خلاف کارروائیوں پر بالکل چُپ نہیں رہیں گے،

خیبر پختنوخواہ کے ضلع بنوں میں جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ہم بار بار کہہ چکے ہیں کہ یہ حکومت خاص ایجنڈےاور مخصوص لابی کے تحت لائی گئی،انڈین پائلٹ کی رہائی سے بارا گھنٹے پہلے ہی امریکا نے کہہ دیا تھا خوشخبری دیں گے، توہین رسالت کیس میں آسیہ مسیح کو بھی یورپ کے دباؤ میں رہا کیا گیا، اب نیشنل ایکشن پلان کو حرکت میں لا رہے ہیں اور مدرسوں پر چھاپوں کا نیا سلسلہ شروع کر دیا گیا، انکا کہناتھا کہ اگر مدرسوں پر چھاپوں کا سلسلہ جاری رہا تو ہم مذمت کریں گے اور اسکے خلاف ہر محاز پر آواز اٹھائینگے.

مولانا فضل الرحمان نے پاکستان تحریک انصاف کے وزیر فیصل واوڈا اور وزیر اطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان کے حالیہ متنازع بیانات کے بارے میں کہا کہ ہندو برادری کے خلاف باتوں پر استفی طلب کیا جائے، لیکن اللہ تعالیٰ کے خلاف بات پر ایکشن کیوں نہیں لیا جاتا؟، پارلیمنٹ میں اپوزیشن کا مطالبہ ہے کہ جس نے اللہ تعالیٰ کی توہین کی اسے قانون کے مطابق سزا دی جائے۔

جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانہ فضل الرحمٰن نے مزید کہا کہ بھارت کے خلاف لڑائی پر پاک فوج کے جوان سرحدوں پر گئے تو ہم نے انہیں حوصلہ دیا اور انہیں خراج تحسین پیش کرتے ہیں.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں