78

مسئلہ کشمیر کو بروقت حل نہ کیا گیا تو پوری دنیا کو خطرات لاحق ہونگے؟ امریکی ادارے کی رپورٹ نے وارننگ جاری کر دیا

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) انٹرنیشنل امریکی نشریاتی ادارے نے کشمیر کے مسئلہ کے حل کے لیے عالمی برادری کو مداخلت کی تجویز دے دی۔ امر یکی اخبار نیو یا ر ک ٹا ئمز نے پاک انڈیا کشیدگی اور کشمیر کے مسئلہ کے حوالے سے اپنے تحریر میں خدشہ ظاہر کیا ہے کہ دنیا کی نظریں شمالی کوریا کے ہتھیاروں کے خطرے پرہیں لیکن شمالی کوریا نہیں بلکہ پاک انڈیا تنازعہ ایٹمی جھنگ کا باعث بن سکتی ہے۔ پاکستان اورانڈیا میں حالیہ کشیدگی کے بعد کسی حد تک سکون اورکمی آگئی ہے لیکن یہ مسئلے کا حل نہیں۔امریکی اخبارنے تحریر میں خدشہ ظاہر کیا کہ اگرپاکستان اور انڈیا

میں کشمیر کا مسئلہ حل نہیں ہوتا تو اس کے ناقابل توقع اورخوفناک نتائج ہوسکتے ہیں اور دنیا بھگت سکتی ہے۔کشمیر کے معماملےکے ہوتے ایٹمی جنگ کا خطرہ برقراررہے گا، ہوسکتا ہے آئندہ تصادم اتنی آسانی سے نہ ٹلے۔ اخبار نے اپنی رپورٹ میں مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے عالمی برادری کی مداخلت کی تجویز دیتے ہوئے کہا کہ عالمی برادری مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے مداخلت کرے، عالمی برادی کے دباؤ کے بغیر مسئلہ کشمیر کا دیرپا حل ممکن نہیں اور ایٹمی جنگ کا خطرہ جوں‌کا طوں برقرار رہے گا، دونوں ملک خطرناک حدود میں داخل ہوچکے ہیں لہذٰا اگلے تصادم کے نتائج بعید از قیاس ہوسکتے ہیں۔واضح رہے کہ 3دن پہلے امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ میں تجزیہ کاروں نے بھی انڈیا کے بلند و بالا دعووں کے غبارے سے ہوا نکال دی تھی اور انہیں آئینہ دکھا دیا تھا۔ ایک آرٹیکل میں لکھا گیا تھا کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان کشیدگی کی وجہ کشمیر ہے ، جس پر بھارت قابض ہے جب کہ جارحیت پسند مودی کے وزارت عظمیٰ پر براجمان ہونے کے بعد سے ناصرف مقبوضہ کشمیر میں مظالم میں شدت آئی بلکہ لائن آف کنٹرول پر بھی کشیدگی میں اضافہ ہوا ہے۔اور مودی کی ایسی پالیسیوں‌سے ایٹمی جھنگ کے بادل منڈلا رہے ہیں‌جو پوری عالمی دنیا کیلئے خطرناک ثابت ہو سکتے ہیں.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں