192

ویلڈن عمران خان، ملک میں آج ایسا تاریخی کام کرنے جا رہے ہیں، عمران خان کے اس اقادم کو جان کر ہر پاکستانی فخر کرےگا،

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک ) پاکستانی وزیراعظم عمران خان نے جب سے اقتدار ممسنبھالا ہے تب سے ہی ملک کیلئے قابل فخر کام کر رہے ہیں وزیر اعظم عمران خان آج ایک روزہ دورے پر تھرپارکر پہنچ رہے ہیں جہاں وہ چھاچھرو میں جلسہ سے خطاب کرینگے جسکی تیاریاں مکمل

کر لی گئی ، محرومیوں کے دیس تھرپارکر میں آج دوپہر کو وزیر اعظم عمران خان پہنچ رہے ہیں وہ خصوصی طیارے کے سے مائی بختاور ائیرپورٹ پہنچیں گے جہاں سے ہیلی کاپٹر کے ذریعے چھاچھرو جائیں گے ، وزیر اعظم عمران خان چھاچھروکے ایک کرکٹ اسٹیڈیم میں جلسہ سے خطاب کریں گے انکی آمد کے حوالے سے علاقہ مکینوں نے امیدیں وابستہ کر رکھی ہیں، تھر میں پانی اور تعلیم کے بعد سب سے بڑامسئلہ صحت کا ہے اور توقع کی جا رہی ہے کہ وزیر اعظم تھر میں ہیلتھ کارڈ پالیسی کا اجرا کریں گے جبکہ علاقہ مکینوں کو تھر پیکیج کے اعلان کی بھی امید ہے، جلسہ میں وفاقی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، دیگر وفاقی وزراء، سرکاری افسران اورپی ٹی آئی سندھ کے عہدیداران اور اراکین اسمبلی بھی شرکت کریں گے، یاد رہے کہ اس سے قبل یہ خبر بھی آئی تھی کہ وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ فیڈرل بورڈ آف ریوینیو (ایف بی آر) کا ادارہ ٹھیک نہ ہوا تو نیا ایف بی آر بنائیں گے، وزیراعظم عمران خان کا اسلام آباد میں تاجر برادری سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ٹیکس دینا ایک قومی فریضہ ہے اور جب تک عوام ٹیکس نہیں دیں گے تو قوم کبھی آزاد نہیں ہو گی بلکہ غلام ہی بنی رہے گی،انہوں نے کہا کہ کبھی بھی قرضہ لینے والی قوم کی عزت نہیں ہوتی، ٹیکس نیٹ بہتر نہ ہوا تو یہ ملک کی سلامتی کا مسئلہ ہے، ان کا کہنا تھا کہ نئے پاکستان کے لیے ٹیکس کلچر
بہت ضروری ہے اور تاجر برادری کے تعاون کے بغیر ملک ترقی نہیں کر سکتا۔ وزیراعظم نے کہا کہ بزنس کمیونٹی کو یقین دلاتا ہوں کہ ٹیکس اکٹھا کر کے دکھاؤں گا اور ٹیکس کا پیسہ عوام پر خرچ کروں گا، ان کا کہنا تھا کہ پوری کوشش ہو گی بزنس کمیونٹی کو زیادہ سے زیادہ سہولیات دی جائیں اور ریاست ملک کی تاجر برادری کو اوپر لائے گی، ہماری ٹیم ہر معاملے میں بزنس کمیونٹی کے ساتھ مشاورت کرے گی، انہوں نے کہا کہ غیر ملکی سرمایہ کاروں کو لا رہے ہیں اور بہت سے لوگ ہمارے ساتھ آ بھی رہے ہیں، جب غیر ملکی سرمایہ کار آتے ہیں تو مقامی لوگوں کو بھی اس کا فائدہ پہنچتا ہے، اپوزیشن کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ایک صاحب کل اسمبلی میں قائد اعظم کی شکل بنا کر تقریریں کر رہے تھے، ان لوگوں کو شرم آنی چاہیے کہ انہوں نے ملک کا قرضہ 30 ہزار ارب روپے تک پہنچا دیا ہے، وزیراعظم نے کہا کہ آہستہ آہستہ کرپشن پر قابو پا رہے ہیں اور اداروں کو ٹھیک کر رہے ہیں، مسائل کو حل کرنے میں تھوڑا وقت لگے گا، انہوں نے کہا کہ ٹیکس نیٹ بڑھائے بغیر تجارتی خسارہ کم نہیں ہو سکتا، ٹیکس نیٹ بڑھانے کے لیے ایف بی آر کو بزنس فرینڈلی اداراہ بنا رہے ہیں، اگر ایف بی آر ٹھیک نہ ہوا تو نیا ایف بی آر بنائیں گےعمران خان نے کہا کہ اپنی قوم پر پورا اعتماد ہے، جب قوم اکٹھی کھڑی رہتی ہے اور کسی کے سامنے جھکنے سے انکار کر دیتی ہے تو اس قوم کو کوئی جھکا نہیں سکتا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں