59

سانحہ ساہیوال:فائرنگ کس نے کی سی ٹی ڈی اہلکاروں کا ایک اور جھوٹا دعویٰ

سانحہ ساہیوال: کار میں بیٹھے افراد ساتھیوں کی فائرنگ سے مارے گئے: گرفتار ملزمان کا دعویٰ

لاہور: سانحہ ساہیوال تفتیش میں اب ایک نیا موڑ آگیا، جے آئی ٹی نے ذیشان کے زیر استعمال گاڑی کے بارے اہم شواہد حاصل کر نے کا دعویٰ کر دیا۔ سی ٹی ڈی اہلکار کا کہنا ہے کار کے اندر بیٹھے افراد موٹر سائیکل سوار ساتھیوں کی فائرنگ سے مارے گئے۔
جے آئی ٹی نے ذیشان کے زیر استعمال گاڑی بارے اہم شواہد حاصل کر لیے۔ ذرائع کے مطابق ذیشان کے زیر استعمال گاڑی فیصل آباد میں مارے جانے والے عدیل حفیظ کی ملکیت تھی، جے آئی ٹی نے تمام سابقہ مالکان کے بیانات اور دستاویزات حاصل کر لئے۔ ذرائع کے مطابق 8 عینی شاہدین کو شامل تفتیش جبکہ سابق ایس ایس پی سی ٹی ڈی جواد قمر کا بیان ریکارڈ کر لیا گیا ہے۔
ادھر مقتول خلیل کے ورثا آج بھی شناخت پریڈ کیلئے نہ پہنچے۔ دوسری طرف جے آئی ٹی کی گرفتار ملزمان سے ابتدائی تفتیش کے نکات سامنےآ گئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق جے آئی ٹی کے اس سوال پر کہ فائرنگ کس نے کی ؟ سی ٹی ڈی اہلکاروں نے جواب دیا کہ فائرنگ دہشتگردوں کی جانب سے کی گئی، ہم نے جوابی فائرنگ کی۔
جے آئی ٹی کے اس سوال پر کار میں سوار افراد کیسے ہلاک ہوئے۔ سی ٹی ڈی اہلکاروں کا موقف تھا کہ موٹرسائیکل سوار ساتھیوں کی فائرنگ سے ہلاک ہوئے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں