176

پاکستان اور انڈیا باڈر پر جنگ کے بادل منڈلانے لگے، دونوں ملکوں کی آرمی کو اجازت مل گئی، لیکن افسوس سیاسی بریگیڈ ایک دوسرے کے ساتھ لڑ رہے ہیں‘ یہ کس کا قصور ہے؟جاوید چودھری کا تجزیہ

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان اور ہندوستان کے بارڈرز پر ایک بار پھر جنگ کے بادل منڈلانے لگے‘ بھارتی وزیراعظم نے 16 فروری کو پاکستان کو جنگ کی کھلی دھمکی دی تھی جس کا جواب ہمارے وزیراعظم عمران خان نے بھی دیا تھا، آج انڈیا نے جموں اور سری نگر میں اپنی فوج بڑھانا شروع کر دی ہے جس کے ردعمل میں آج ہمارے وزیراعظم نے بھی آرمی چیف کو انڈین جارحیت کی صورت میں جواب دینے کا اختیار دے دیا‘اب صورت حال یہ ہے انڈین آرمی کو بھی حملے کی اجازت مل چکی ہے اور ہماری فوج کو بھی جواب کیلئے حکومت سے اب مزید اجازت کی ضرورت نہیں رہی‘ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ تک نے اس صورت حال کو تشویشناک قرار دے دیا لیکن ہم جب ملک کے اندرونی سیاسی حالات کو دیکھتے ہیں تو یہاں سنگینی کا احساس ہے اور نہ ہی سنجیدگی، آپ ملاحظہ کیجئے ایک طرف جنگ کے بادل ہیں اور دوسری طرف ہمارے سارے سیاسی بریگیڈ ایک دوسرے کے ساتھ لڑ رہے ہیں‘ یہ کس کا قصور ہے‘ یہ کس کا فیلیئر ہے اور قوم کو حالات کی سنگینی کا احساس کون دلائے گا‘ حکومت یا اپوزیشن‘ یہ ہمارا آج کا ایشو ہوگا‘ ہمارے ساتھ رہیے گا۔ کل تک میں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں